Search | تلاش
Archives
TaemeerNews Rate Card

Ads 468x60px

Our Sponsor: Socio Reforms Society India

تعمیر نیوز آرکائیو - TaemeerNews Archive

2015-11-03 - بوقت: 18:56

ملک میں بڑھتی ہوئی عدم رواداری پر سونیا گاندھی کا گہری تشویش کا اظہار

Comments : 0
کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پیر کے دن پرنب مکرجی سے راشٹریہ پتی بھون میں ملاقات کرتے ہوئے انہیں ملک میں بڑھتی ہوئی عدم رواداری سے واقف کرایا ۔ جبکہ اس ملاقات کی کوئی تفاصیل حاصل نہیں ہوسکی۔ کانگریس صدر اور سینئر پارٹی قائدین و اراکین پارلیمان نے صدر جمہوریہ سے بڑھتی ہوئی عدم رواداری پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کو اس پر فی الفور کارروائی کرنے کا مشورہ دینے کی درخواست کی ۔ کانگریس قائدین کی صدر جمہوریہ سے تقریبا ایک گھنٹہ تک ملاقات ہوئی ۔ عدم رواداری پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ اس ضمن میں شیطانی کارروائی کا سامنا کرتے ہوئے ان طاقتوں کا مقابلہ کریں گی جو ملک میں نفرت پھیلا رہی ہیں اور ملک کے اتحاد کے لئے خطرہ بنی ہوئی ہیں۔ ایک مخصوص نظریہ کی آرگنائزیشن اور لوگ ملک میں لوگوں کو تقسیم کررہے ہیں ۔ ہم قطعی اسے ماننے کے لئے تیار نہیں ہیں کہ یہ حادثہ ہے۔ نفرت و تشدد اور نچلی ذہنیت کے تحت کارروائی ایک منصوبہ بند طریقہ سے کی جارہی ہے۔ ہم ان شیطانی منصوبوں کو کامیاب ہونے نہیں دیں گے ۔ یہ ملک کی بنیادوں کو ہلاکر رکھ دے گی۔ ہم اس سے جنگ کرنے کے لئے تیار ہیں ۔ سونیا نے ہفتہ کے دن ایک اجلاس خطاب کرتے ہوئے کہا۔
دریں اثنا نئی دہلی سے پی ٹی آئی کی علیحدہ اطلاع کے بموجب جنتادل یو لیڈر کے سی تیاگی نے آج صدر جمہوریہ پرنب مکرجی سے جاریہ ہفتہ ملاقات کرتے ہوئے ملک میں بڑھتی ہوئی عدم رواداری کی طرف ان کی توجہ مبذول کرانے صدر کانگریس سونیا گاندھی اور نائب صدر راہول گاندھی کے منصوبہ کا خیر مقدم کیا۔ تیاگی نے کہا کہ میں سونیا اور راہول گاندھی کے فیصلہ کی تائید کرتا ہوں جو راشٹرپتی بھون جانے کا منصوبہ رکھتے ہیں ۔ عدم رواداری کے خلاف احتجاج کرنے کا یہ منفرد انداز ہے ۔ سی پی آئی لیڈر ڈی راجہ نے کہا یہ حقیقت ہے کہ عدم رواداری میں اضافہ ہورہا ہے اور صورت حال اتنی ابتر ہے کہ یہ سمجھدار شہریوں کے ذہن کو جھنجھوڑ رہی ہے ۔ راجہ نے کہا کہ نہ صرف دانشور، فنکار، ادیب، مورخ اور سائنسداں بلکہ صنعت کار بھی اس صورت حال کے بارے میں فکر مند ہیں ۔ وہ اس ماحول میں صنعتیںنہیں چلا سکتے ۔ کانگریس قائد پی ایل پونیا نے کہا کہ ملک میں مایوسی اور فکر مندی کا عالم ہے۔ انہوں نے کہا کہ سارا ملک پریشان ہے ۔ کانگریس بھی پریشان ہے۔ ہمارے قائدین سونی گاندھی اور راہول گاندھی نے اس کے بارے میں کئی مرتبہ اظہار خیال ہے ، چاہے وہ فنکارہوں یا ادیب ہر شخص یہی بات کہہ رہا ہے ۔ کرن شاہ اور نارائن مورتی کو بھی فراموش نہیں کرنا چاہئے ۔ اب بی جے پی یہ کہہ رہی کہ یہ سب بی جے پی کے مخالف ہیں۔ آخر ان لوگوں نے این ڈی اے کے واجپائی کے دور اقتدار میں کیوں ایسا نہیں کیا ۔ توقع ہے کہ سونی گاندھی اور راہول سینئر قائدین اور ارکان پارلیمنٹ کے ساتھ اس مسئلہ کو صدر جمہوریہ کے ساتھ اٹھائیں گے ۔ توقع ہے کہ وہ راشٹرپتی بھون تک مارچ نکالیں گے ۔ کانگریس ذرائع نے یہ بات بتائی۔ سونیا نے بڑھتی عدم رواداری پر کل اظہار تشویش کرتے ہوئے پھوٹ ڈالنے والی طاقتوں کے شیطانی منصوبوں کے خلاف لڑنے کا عزم کیا تھا جن سے ملک کو سنگین خطرہ لاحق ہے ۔

Sonia, Rahul Gandhi to Meet President Pranab Mukherjee Over 'Growing Intolerance'

0 comments:

Post a Comment