Search | تلاش
Archives
TaemeerNews Rate Card

Ads 468x60px

Our Sponsor: Urdu Kidz Cartoon Website

تعمیر نیوز آرکائیو - TaemeerNews Archive

2018-03-21 - بوقت: 13:06

جنس کا جغرافیہ - قسط:27

Comments : 0

ask-the-sex-expert

عرب زمانہ قدیم سے جنسیات کی اہمیت سے واقف ہیں ۔ اس موضوع کی اہمیت و افادیت کے پیش نظر تقریباً پانچ سو سال قبل علامہ شیخ عمر نفزوی نے ایک کتاب "معطر گلستان" تحریر کی تھی ، جس سے ماہرین جنسیات آج بھی استفادہ کرتے ہیں ۔ شیخ نے جنسی چھیڑ چھاڑ کے بارے میں جو مشورے دئیے ہیں ہم انہیں قارئین کی معلومات کے لئے اختصار کے ساتھ پیش کر رہے ہیں ۔

"۔۔۔۔۔ اے وہ جو مجھ سے پوچھتے ہو کہ کن باتوں سے مباشرت کے ذوق و شوق میں اضافہ ہوتا ہے تو وہ مباشرت سے قبل کی چھیڑ چھاڑ اور بوس و کنار ہے۔ یقین کرو بوسے ، ہونٹوں اور دانتوں سے ہلکے ہلکے کاٹنے یا دبانے ، ہونٹوں کو چوسنے ، گرم جوشی سے ہم آغوشی کرنے، پستانوں کے قریب منہ لے جانے اور محبوبہ کی زبان چوسنے سے الفت اور محبت گہری اور پائیدار ہوتی ہے ۔

" اے وہ لوگو جو عورت کی محبت اور الفت کے خواہش مند ہو تو مباشرت سے قبل اس کے ساتھ چہل بازی کرو، خوب کھلواڑ کرو، مستی کے لئے اسے آمادہ کرو، اس کے جسم کو مکمل توجہ اور صرف اس کا دھیان کر کے، خاطر جمعی کے ساتھ سہلاؤ، عیش و نشاط کے مہربان لمحوں کو یوں ہی نہ گزر جانے دو۔ اس لمحے اس کی آنکھیں نیم وا اور بھیگی بھیگی ہوں گی، لیکن یاد رکھو ، کہ جب تک جنسی چھیڑ چھاڑ اور بوسے بازی نہ ہو جائے اس وقت تک : 'نہیں' !!"

" سب سے پہلے رفیقہ کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرو، بوسوں سے دانت گاڑ کر، زبان اور لبوں کو چوس کر، گردن اور رخساروں کو سہلا کر، مسل کر بیوی کو مشتعل کرو ۔ اسے بستر میں اِدھر اُدھر پلٹاؤ، کبھی چت کرو اور کبھی پیٹ کے بل۔ یہاں تک کہ تمہیں اس کی آنکھوں سے اندازہ ہو جائے کہ 'وقت' قریب ہے۔۔۔۔۔جب اس کے ہونٹ لرزنے لگیں اور سرخ ہو جائیں اور مستی سے اس کی آنکھیں مندنے لگیں اور وہ تیزی سے سانس لینے لگے تو سمجھ لو کہ مباشرت کے لئے تیار ہے، تب۔۔۔۔۔۔!"

"اے لوگو! اگر تم مباشرت چاہتے ہو تو رفیقہ کو فرش پر لٹا دو اس کے سینے سے چمٹ جاؤ۔ اس کے لب تمہارے لبوں کے قریب ہوں۔ پھر لبوں کو دبالو اور اس کی سانوں کو گھونٹ گھونٹ پیو ، پستانوں ، ناف اور جانگھوں کے بوسے لو، کاٹو، نچلے جنسی اعضاء کو سہلاؤ تاکہ وہ مستی سے مدہوش ہونے لگے، تو۔۔۔۔۔۔!

"اے لوگو! عورت ایک ایسے پھل کی مانند ہے جو اپنی خوبی اس وقت تک ظاہر نہیں کرتا جب تک کہ تم اسے ہاتھوں سے نہ رگڑو۔ تلسی کے پودے کو دیکھو، اگر تم اسے اپنی انگلیوں سے نہ مسلو گے تو اس سے کوئی خوشبو نہیں اڑے گی۔ کیا تم نہیں جانتے کہ عنبر کو جب تک ہاتھوں کی حرارت نہ ملے وہ اپنی خوشبو کو اپنے اندر پوشیدہ رکھتا ہے ۔ عورتوں کا بھی ایسا ہی معاملہ ہے ۔ اگر تم جنسی چھیڑ چھاڑ سے جس میں بوسے بازی، دانتوں سے ہلکے ہلکے کاٹنا، مساس، کھلواڑ اور چہل بازی وغیرہ شامل ہو، اس کے جذبات کو مشتعل نہیں کرتے ، تم کو اس کے ساتھ ہم بستر ہونے میں کوئی لطف محسوس نہ ہوگا ۔ اور تم اس کے دل میں اپنے لئے الفت، محبت، انسیت چاہت وغیرہ پیدا نہ کر سکو گے اور اس کی تمام خوبیاں تم سے پوشیدہ رہیں گی۔"

" اے لوگو! بوسہ جماع کا اہم حصہ ہے، ہونٹوں پر جو بوسہ لیا جائے، جس میں زبان اور لب کو چوسنا بھی شامل ہو، بہترین بوسہ ہے۔ زبان کے چوسنے سے شیریں اور تازہ لعاب خار ج ہونے لگتا ہے ۔شوہر کا فرض ہے کہ وہ رفیقہ کی زبان چوس کر ، رگڑ کر اس کے نفیس اور شیریں لعاب سے جو صاف کئے ہوئے شہد سے زیادہ لذیذ ہوتا ہے اپنی مسی کی پیاس بجھائے ۔ یاد رکھو کہ ایک نم بوسہ بہتر ہے جلد بازی کی مباشرت سے!"

The Geography of sex -episode:27

0 تبصرے:

ایک تبصرہ شائع کریں