Search | تلاش
Archives
TaemeerNews Rate Card

Ads 468x60px

Our Sponsor: Socio Reforms Society India

تعمیر نیوز آرکائیو - TaemeerNews Archive

2016-02-10 - بوقت: 14:14

ندا فاضلی - نظم انتظار - انگریزی ترجمہ

Comments : 0

intizar by Nida Fazli
ندا فاضلی کی مقبول نظم "انتظار" کا ایک خوبصورت انگریزی ترجمہ حیدرآباد (دکن) کی محترمہ الزبیتھ کورین 'مونا' نے کیا ہے۔ ان کی اجازت کے ساتھ قارئین "تعمیر نیوز" کے لیے پیش ہے۔
ندا فاضلی کی اصل مکمل نظم ریختہ ڈاٹ کام پر (تصویری شکل میں) یہاں ملاحظہ کی جا سکتی ہے۔
اور تحریری صورت (یونیکوڈ) میں یہاں نقل کی جا رہی ہے:

انتظارVigil
مدتیں بیت گئیںYears have passed by,
تم نہیں آئیں اب تکYou have not yet come
روز سورج کے بیاباں میںEvery day, life wanders in the desert of the sun
بھٹکتی ہے حیات
چاند کے غار میںNight, tired out, sleeps in the cave of the moon
تھک ہار کے سو جاتی ہے رات
پھول کچھ دیر مہکتا ہےFlowers bloom awhile, then fade away
بکھر جاتا ہے
ہر نشہEach intoxication recedes after reaching its peak;
لہر بنانے میں اتر جاتا ہے
وقت!Time blows away with the faceless winds
بے چہرہ ہواؤں سا گزر جاتا ہے
کسی آواز کے سبزے میں لہک جیسی تمYou are like a sway of a lush voice
کسی خاموش تبسم میں چمک جیسی تمLike the brightness in a silent smile,
کسی چہرے میں مہکتی ہوئی آنکھوں جیسیLike eyes shining in a face
کہیں ابرو کہیں گیسو کہیں بانہوں جیسیLike eyebrows, like trees, like arms,
چاند سےFrom the moon to the flowers,
پھول تلک
یوں تو تمہیں تم ہو مگرIt is you and only you, but
تم کوئی چہرہ کوئی جسم کوئی نام نہیںYou are not any face, any body, any name;
تم جہاں بھی ہوWherever you are,
ادھوری ہو حقیقت کی طرحLike reality, you are incomplete,
تم کوئی خواب نہیں ہوYou are no dream, which alone can be complete
جو مکمل ہوگی

Nida Fazli's poem 'Intizar'
English Translation: Elizabeth Kurian 'Mona' (Hyderabad, India. Mob.: +919849183498)

0 comments:

Post a Comment