Search | تلاش
Archives
TaemeerNews Rate Card

Ads 468x60px

Our Sponsor: Socio Reforms Society India

تعمیر نیوز آرکائیو - TaemeerNews Archive

2015-11-29 - بوقت: 23:48

متحدہ عرب امارات میں اسرائیلی اسرائیلی سفارتی مشن نہیں کھلے گا

Comments : 0
ابو ظہبی
رائٹر
متحدہ عرب امارات کے ایک سینئر سرکاری عہدیدار نے ان میڈیا اطلاعات کی سختی سے تردید کی ہے کہ جن میں اسرائیل کے حوالے سے یو اے ای کی پالیسی میں تبدیلی کا اشارہ کیا گیا تھا ۔ یو اے ای کی وزارت خارجہ کی ڈائرکٹر کمیونیکیشن مریم الفلاسی نے ایک بیان میں واضح کیا کہ دوبارہ قابل استعمال توانائی کے ادارہ، ارینا ایک آزاد بین الاقوامی ایجنسی ہے، جو ایسی انجمنوں کے لئے بنائے گئے قوانین اور ضابطوں کے تحت کام کرتی ہے ۔ یو اے ای کی سرکاری نیو زایجنسی، وام نے مریم فلاسی کا بیان نقل کیا ہے کہ جس میں انہوں نے کہا کہ اسرائیل اور ارینا کے درمیان کسی بھی قسم کے معاہدے سے یو اے ای کے موقف یا اسرائیل سے تعلقات میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ۔ اس سے پہلے تل ابیب سے شائع ہونے والے اخبار ہارنز نے دعویٰ کیا تھا کہ اسرائیل متحدہ عرب امارات کے ساتھ سفارتی تعلقات نہ ہونے کے باوجود وہاں اپنا پہلا سفارتی مشن کھولے گا ۔ اخبار نے اسرائیل کی وزارت خارجہ کے حوالے سے بتایا کہ ابو ظہبی میں قائم کیاجانے والا یہ سفارتی مشن بین الاقوامی انرجی آرگنائزیشن کا حصہ ہوگا ۔ واضح رہے کہ 1948میں عرب ، اسرائیل تنازع شروع ہونے کے بعد سے متحدہ عرب امارات کی طرح دوسری عرب ریاستوں نے اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا ہے۔ قبل ازیں اطلاعات میں کہا گیا تھا کہ اسرائیل، ابو ظہبی میں بین الاقوامی قابل تجدید توانائی ایجنسی کا ایک سفارتی سطح کا مشن کھولنے کا منصوبہ رکھتا ہے ۔جو متحدہ عرب امارات میں اس کا پہلا قائم کردہ نمائندہ دفتر ہوگا ۔ اسرائیلی سفارتکاروں نے آج یہ بات کہی ۔ یہ دفتر ایک مکمل مشن نہیں ہوگا ۔ لیکن قابل تجدید توانائی ایجنسی کو تفویض کردہ ایک سفارتکار پر مشتمل ہوگا ۔ یہ پہلا موقع ہوگا کہ اسرائیلی وزارت خارجہ کے عہدیدار کے لئے خلیجی ممالک میں مستقل دفتر ہوگا۔ وزارت خارجہ کے ترجمان نحس ہان نے ایک اسرائیلی اخبار ہاریس میں تفصیلی رپورٹ کی توثیق کی ہے اور تین سفارتی عہدیداروں نے رائٹر سے کہا کہ یہ اقدام جاری ہے ۔ اسرائیل کے مشرق وسطیٰ میں بیشتر ممالک کے ساتھ رسمی سفارتی تعلقات نہیں ہے۔

Back-door diplomacy: Israel to open mission in UAE

0 comments:

Post a Comment